مسئلہ آپ کا، حل ہمارا

سوال: نماز کے دوران بہت زیادہ خیالات آتے ہیں، جس کی وجہ سے میں بہت زیادہ پریشان ہوں۔
شعیب احمد علی، جماعت سکینڈ ایئر، گورنمنٹ ہائیر سکینڈری سکول چنی گوٹھ، ضلع بہاول پور
جواب: شعیب صاحب! زیادہ پریشانی کی بات نہیں، یہ فطری بات ہے۔ آپ نماز کا ترجمہ یاد کر لیجیے اور جو جو لفظ ادا کرتے جائیں اس کا ترجمہ سامنے لاتے جائیے۔ ذہن میں اپنے سامنے یہ تصور کر لیا کیجیے کہ اللہ جی آپ کے سامنے کھڑے ہیں۔ جتنی یکسوئی سے آپ ان کے آگے جھکیں گے، ویسے ہی محبت اور پیار سے وہ قبول کریں گے۔ خیال آتے ہیں تو آنے دیں۔ نماز مت چھوڑیں، اپنے آپ کم ہو جائیں گے۔
٭٭٭٭٭
سوال: مجے فزکس اور کیمسٹری کے مضامین پڑھنے میں بہت مشکل لگتے ہیں۔
احمد علی خان، جماعت نہم، گورنمنٹ کمپری ہینسیو بوائز ہائیر سکینڈری سکول ملتان
جواب: واہ جی حضرت، اگر یہ آپ کو مشکل لگتے ہیں تو سب سے پہلے آپ یہ سوچنا چھوڑ دیجیے کہ یہ مشکل ہیں۔ پھر خود کو چیلنج کر کے محنت کیجیے۔ کوئی کتاب کبھی خود انسان سے مشکل نہیں ہوتی۔ خود کو ذہنی طور پر تیار کر لیجیے کہ آپ نے کرنی ہے۔ پھر اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر مختلف گیمز اور کوئز کی صورت اسے یاد رکھیے۔ ہاں اگر آپ کی دلچسپی ان مضامین میں نہیں، طبیعت کے خلاف ہے تو فوراً تبدیل کر کے دوسرے مضامین رکھ لیں۔
شیئر کریں
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •